کرائسٹ چرچ حملہ:اندھا دھند فائرنگ کا سلسلہ رکا اور امدادی پارٹیاں مسجد میں پہنچیں تو ایک متاثرہ زخمی شخص کیا کام کر رہا تھا؟دیکھ کر سب کی آنکھیں نم ہو گئیں

" >

کرائسٹ چرچ (ویب ڈیسک) نیوزی لینڈ کے شہر کرائسٹ چرچ کی دو مساجد میں اندھا دھند فائرنگ کے نتیجے میں 40 افراد شہید ہو گئے ہیں جبکہ قانون نافذ کرنے والے اداروں نے 3 افراد کو حراست میں لے کر واقعے کی تحقیقات شروع کر دی ہیں۔حملے کی اطلاع ملتے ہی قانون نافذ

کرنے والے اداروں کے اہلکار اور امدادی ٹیمیں موقع پر پہنچ گئیں اور زخمیوں و شہداءکو ہسپتال منتقل کرنے کا عمل شروع کر دیا جس دوران ایک زخمی ہونے والے مسلمان شخص کو جب سٹریچر پر لٹایا گیا تو اس کی شہادت کی انگلی آسمان کی جانب اٹھی نظر آئی جو سوشل میڈیا پر وائرل ہو گئی ہے۔اس شخص کے جذبہ ایمانی کو دیکھ کر ہر مسلمان کا دل پسیج گیا ہے اور ہر کوئی داد دے رہا ہے کہ مصیبت کے اس وقت میں بھی وہ رب العالمین کو یاد کر رہا ہے اور زخمی ہو کر بھی یہ گواہی دے رہا ہے کہ اللہ ایک ہے اور تمام جہانوں کا مالک ہے۔ خیال رہے نیوزی لینڈ کے شہر کرائسٹ چرچ میں دو مساجد پر دہشتگرد نے نماز جمعہ کے دوران نمازیوں پر اندھا دھند فائرنگ کر دی جس کے نتیجہ میں 40 افراد کے شہید ہونے کی اطلاعات ہیں ۔نیوزی لینڈ کی پولیس نے مجموعی طور پر چار افراد کو گرفتار کر لیا ہے جن میں سے ایک نے خود کش جیکٹ اور ایک نے ملٹری طرز کی یونیفارم زیب تن کر رکھی تھی ۔

اپنا تبصرہ بھیجیں